imageshad.jpg

This Page has 23808viewers.

Today Date is: 17-01-19Today is Thursday

قطر میں پاکستان تحریک انصاف کے حالات زار

  • منگل

  • 2019-01-08

  دوحہ قطر (سردار خان ۔بیورورپورٹ)اختلافات تو ہر جگہ اور ہر پارٹی میں ہوتے ہیں لیکن ان اختلافات کو دور کرنے کےلئے کوشش کرنی پڑتی ہے. لیکن جب اختلافات اور تحفظات کو کوئی حل کرنے کی کوشش نہ کریں تو بغاوت کی شکل اختیار کر لیتی ہے. اجکل تحریک انصاف قطر میں بھی کچھ ایسے ہی حلات دیکھنے مل رہےہیں کوئی ورکر یا سی سی اور ایم سی کابینہ سے خوش نظر نہیں آرہا. اس بارے جب میں نے ایک بانی رکن مولا جان خٹک سے رابط کیا تو ان کا کہنا تھاکہ ایک سال پورہ ھوگیا ابھی تک سلیکٹ کابینہ نے کوئی کام نہیں کیا. سوائے سیلفی کے. پہلے بھی پی ٹی ائی قطر 2 حصوں میں تقسیم ھوئی تھی ابھی بھی سلیکٹ کا بینہ کی  وجہ سے پارٹی کے حالات  خراب ہوچکے ہیں  اور اس,کی خاص وجہ سلیکٹڈ  ممبرز کی لاپرواہی ہے کیونکہ ان سے جب بھی کوئی بات پوچھی جاتی ہے تو وہ ناراض ہوجاتے ہیں  کہ ہم لوگوں سے کیوں پوچھ رہے ہو. اور جب ناراض ورکرز کے بارے میں کوئی باتطکی جائے تو ان کا عجیب جواب ہوتاہے کہ اگر ایک جائےگا تو100 اور اجائیں گے. لیکن ابھی تک 100 گئے لیکن ایک نہیں ایا ان کا مزید کہنا تھا کہ الیکشن کے وقت یہ لوگ ہمارے جھولی میں پڑے تھے  لیکن  جب ان کی  نوٹیفیکیشن  ہوا تو ایسا محسوس ہورہا تھا کہ ان کو کوئی بہت بڑی وزارت مل گئی ہو اور جو وعدے کی تھی ابھی ایک بھی پورہ نہیں کیا 130 ایم سیز میں سے گروپ میں 58 ایم سیز باقی ہیں. انہوں نے کہا کہ میں ایک سوال پوچھنا چاہتاہوں کہ کیا یہ سب ایم سیز غلط ہوسکتے ہیں یا یہ سب غلطی سلیکٹڈ کابینہ کہ ہے میں سمجھتا ہوں اگر کوئی عہدیدار اپنے اندر کے اختلافات ختم نہیں کرسکتے اور ناراض ورکرز کے تحفظات دور نہیں کرسکتے تو ان کو کوئی حق نہیں کہ اپنے عہدے پر رہے. منتخب کابینہ کا ایک ہی شوق ہے کہ  جب بھی  پاکستان سے کوئی وزیر آتاہے تو صبح سےلیکر  شام تک  سیلفی لینے اور فوٹو سیشن کرنے  کے اتنظار میں رہتے ہیں. باقی اور کوئی کام نہیں کیا گیا ہے. اسکے علاوہ سب خودعرض ہے اور کہتے ہیں  کہ ہمیں کسی کو جوابدہ نہیں ہیں  کیا ہمارا پی ٹی ائی کا یہی منشور ہے یہی ائین ہے کیا خان صاحب نے اسطرح لوگوں کیلئے یہ پارٹی بنائی تھی.  اسطرح لوگوں سے بہت سارے ورکرز ناراض ہیں اور اس بات  مجھے بہت دکھ ہے لیکن کوئی سننے والا نہیں ہے. خان صاحب اور مرکزی قیادت سے اپیل کے ایسے لوگوں کو آگے مت لائیں جو پارٹی کے ساکھ کونقصان پہنچائیں .

صحت و تندرستی کے لیے خاص مشورے