غازی ہومین رائٹس سوسائٹی کے زیر اہتمام ہونے والی پہلی رائٹرز تربیتی ورکشاپ خانیوال کے بلدیہ ہال میں منعقد کی گئی۔


  • منگل
  • 2018-10-23
غازی ہومین رائٹس سوسائٹی کے زیر اہتمام ہونے والی پہلی رائٹرز تربیتی ورکشاپ جو کہ خانیوال کے بلدیہ ہال میں منعقد کی گئی۔ اس عظیم وشان تربیتی ورکشاپ کے منتظمین جن میں محمد یوسف صدیقی ابن نیاز سلیم یوسف دلاور حسین سعدیہ ہما شیخ عمارہ کنول رشید احمد نعیم آر ایس مصطفیٰ آفاق احمد خان تھے۔ اس تقریب کوچار چاند لگانے والے جن میں رائٹرز۔ ادیب۔ شاعر۔ سکرپٹ رائٹر۔اور کالم نویس شامل۔تھے۔ جن میں قاری عبداللہ نبیلہ اکبر رانا سعید یوسف عبداللہ نظامی علی عمران ممتاز حفیظ چوہدری قاری عظمت عبدالوحید عمرانہ اسعد نقوی مرزا یاسین بیگ مدثر سبحانی اشتیاق احمد ستارہ امین کومل حاجی لطیف کھوکھر عبدالصمد مظفر شیزاد اسلم راجہ عبد الباری عزیز رفیق عبدالرحیم واصب غوری ۔ جاوید فخری اور لا تعداد کتابوں کے مصنف نور اللہ رشیدی صاحب شامل تھے۔ اس موقع پربطور مہمان خصوصی خوبصورت لب ولہجے کے مالک اور عمدہ شاعر محترم زاہد شمسی صاحب نے اپنے خطاب میں کہا کہ اس طرح کی ورکشاپس کا انعقاد نئے لکھاریوں کےلیے مشعل راہ ثابت ہونگی۔ ابن نیاز نے سپاس نامہ پیش کیاجس میں انہوں نے غازی ہیومن رائٹس ویلفیئرسوسائٹی کے اغراض و مقاصد بیان کیے۔ اسدنقوی نے سکرپٹ رائٹنگ اور اس کی اہمیت کے عنوان سے تربیتی لیکچر دیا سجاد جہانیہ ( ریزیڈنٹ ڈائریکٹر ملتان آرٹس کونسل) اور زاہد شمسی ( معروف شاعر ادیب ) کی جانب سے لیکچر کو سراہا گیا ۔ دوسرے سیشن میں اس تقریب میں تمام شرکائ کو ایواڈز سےبھی نوازہ گیا۔ پاکستان رائٹرز ونگ کی جانب سے بطور مہمان خصوصی بھی ایوارڈ دیا گیا بلاشبہ آفاق احمد بھائی اور قاری عبد اللہ کی ٹیم ابن نیاز بھائی کی محبتیں اور محنت رنگ لے آئی اور خانیوال میں ملک بھر سے آئے لکھاریوں کی ورکشاپ نے اسے نیشنل ورکشاپ بنا دیا۔امید کی جاتی ہے اسطرح کی ورکشاپ کا ہرسال انعقاد کیا جائے گاتاکہ نئے آنے والےاس سے استفادہ حاصل کر سکیں۔