imageshad.jpg

This Page has 45390viewers.

Today Date is: 25-03-19Today is Monday

کراچی کو تجاوزات سے پاک کر نا احسن قدم بےروزگاردوکانداروں کا کیاقصور؟

  • پیر

  • 2018-12-17

تحریک انصاف کی حکومت کا احسن اقدام ہے جو کراچی سے تجاوزات کا خاتمہ ہو رہا ہے جس سے کراچی کی اصل شکل ابھر کر سامنے آ رہی ہے۔ اسی طرح گندگی کے ڈھیروں کو بھی ٹھکانے لگانا چاہیے۔ تاکہ کر اچی کا وہی پرانا حسن سامنے آ سکے۔ اس کے ساتھ ساتھ حکومت کے لیے ایک بہت بڑی مشکل کا سامنا ہے وہ ہے جن لوگوں کی ناجائزدوکانیں مسمار کی جا رہیں ہیں اور وہ بے روزگار ہو رہے ہیں ان کو متبادل جہگہ کب فراہم کی جائے گی۔ اس وقت وہ لوگ بے یارومدد گار ہیں اور یہ حکومت وقت کے لئے لمحہ فکریہ ہے۔ اس وقت یہ جو صورت حال پیدا ہوئی ہے سرکاری زمینوں پر قبضہ مافیا نے چائنہ کٹنگ کر کے زمینیں فروحت کیں ہیں وہ کام تو پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم کے دور حکومت میں ہوئے ہیں۔ اس مسئلہ پر ان سے بھی جواب مانگا جانا چاہیے۔ سندھ میں تو حکومت تو پیپلز پارٹی کی ہی رہی ہے اور ایم کیو ایم اس کی ہمیشہ اتحادی جماعت رہی ہے۔ ان حکومتوں کی کارکردگی تو سب کے سامنے عیاں ہے کوئی بھی چیز ڈھکی چھپی نہیں ہے۔ اس وقت مرکز میں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ نوازباری باری حکومت کے مزے لیتے رہے ہیں۔ کیا یہ سندھ حکومت کی ذمے داری نہیں تھی ان قبضہ مافیا کو نکیل ڈالنا جسطرح سرکاری زمینوں پر قبضہ کیا گیا اور یہاں تک کہ سرکاری پلاٹ اور بچوں کے لئے مختص کھیل کے میدان بھی نہ چھوڑے ان پر شادی ہال تعمیر کردیے گئے۔ اس وقت کراچی کو تجاوزات سے پاک کرنا اور گندگی کے ڈھیروں کوٹھکانے لگانا ایک اہم مسئلہ ہے اور میئر کراچی اس پر بھرپور طریقے سے کام کر رہے ہیں۔ لیکن ان بے روزگار ہونے والے دوکان داروں کا کیا قصور ہے؟یہ جہگہ تو انھوں نے پراپرٹی ڈیلروں سے خریدی ہے جو سرکاری اداروں کے اہل کاروں سے مل کر عوام کو بیچ گئے مفت میں تو کسی کو زمین الاٹ نہیں کی ہوئی اور اس وقت سند ھ حکومت کہاں تھی۔ ان دوکان داروں جن کو یہ جہگہ ورثہ میں ان کے آباو اجداد دے گئے ہیں ان کا کیا قصور ہے۔ اب صورت حال یہ ہے ان بے چارے دوکان داروں اور ٹھیلے والوں کے گھر وں کا چولہا جلنا بند ہو گیا ہے جب کے وزیر اعظم پاکستان عمران خان صاحب کا کہنا ہے ہم لوگوں کو نوکریاں دیں گے اور پانچ لاکھ گھر بناکر دیں گے جبکہ یہاں معملہ الٹ ہو گیا ہے۔ اس ناجائز تجاوزات کو گرانے میں دکانوں کے ساتھ ساتھ جو غریبوں کے گھر تھے وہ بھی گرا دیے گئے۔ اب لوگ کھلے آسمان کے نیچے اپنی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ ان لوگوں کا کہنا ہے ہم نے پی ٹی آئی کو اس لیے ووٹ دیے تھے کہ ہم سے ہمارا روزگار اور چھت چھین لی جائے۔ یہ سب کیادھرا پچھلی حکومتوں کا ہے پی ٹی آئی پہلی دفعہ حکومت میں آئی ہے لیکن پھر بھی اس مسئلہ کا حل تو اسی حکومت کو کرنا ہے۔ حال ہی میں وزیر اعظم عمران خان نے کراچی کا دورہ کیا ہے اور ان کو اس مسئلہ کی سنگینی سے آگاہ کیا گیا ہے۔ جو پی ٹی آئی کا ویژن ہے کہ پاکستانی عوام کی غربت کو کم کر نا ہے اور ملک میں خوشحالی لانی ہے۔ کراچی کی خوبصورتی کو بحال کرنے کیلئے یہ تجاوزات گرانے کا عمل تو جلد مکمل ہو جائے گا اب ضرورت اس امر کی ہے کہ پی ٹی آئی کی حکومت کراچی کو ان سے پاک کردیتی ہے اور شہر کی اصل شکل بحال ہو جاتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ان بے روزگاروں کو برسر روزگارلانا بھی مرکزی اور صوبائی حکومت کی اولین ترجیح ہو نی چاہیے تاکہ عوام کے دیے ہوئے ووٹ کے تقدس کو بحال کیا جا سکے۔

صحت و تندرستی کے لیے خاص مشورے