bannerdlt2020.jpg

This Page has 274174viewers.

Today Date is: 26-11-20Today is Thursday

پنجاب حکومت فوری طور پرعورت مارچ کو سکیورٹی فراہم کرے.وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری

  • جمعہ

  • 2020-03-06

لاہور (ویب ڈیسک) سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام دیتے ہوئے وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ پنجاب حکومت فوری طور پرعورت مارچ کو سکیورٹی فراہم کرے۔ انھوں نے کہا کہ اگر حکومت رضویز اور عزیزیز کو نفرت کی تبلیغ کی بھی اجازت دے سکتی ہے تو پنجاب حکومت عورت مارچ 2020 کی سلامتی کے لئے فوری اقدامات اٹھائے۔انکا مزید کہنا ہے کہ ایک پرامن گروپ کو ان کے خیالات کی تبلیغ کرنے کی اجازت دی جاسکتی ہے اور ان کے خیالات ہم سے مختلف ہو سکتے ہیں اور اس میں کوئی حرج نہیں ہے۔واضع رہے کہ لاہور ہائی کورٹ نے عورت مارچ کی اجازت دے دی تھی۔ عدالت کی جانب سے کہا گیا تھا کہ مارچ کو پر امن رکھا جائے اور غیراخلاقی پلے کارڈز کا استعمال نہ کیا جائے۔دوسری جانب عورت مارچ کی جانب سے ”تم ریپسٹ ہو “ گانا ریلیز کردیا گیا تھا۔ گانے میں خواتین کے خلاف جنسی تشدد پر بات کی گئی تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ جنسی تشدد اخلاقی نہیں بلکہ سیاسی مسئلہ ہے۔ عورت مہم کے جاری کردہ گانے میں عدالتی نظام کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا گیا تھا کہ عدالتی نظام خواتین کے حقوق کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام رہا جو کہ قابل مذمت ہے۔اور ساتھ ہی ساتھ معاشرے میں خواتین کے حقوق کے بارے میں شعور اجاگر کیا گیا ہے۔ گانے کی دھن میں یہ بتایا گیا تھا کہ کس طرح سرکاری ادارے ، پولیس ‘ عدلیہ سمیت سیاسی طاقتیں خواتین کے حقوق کی خلاف ورزی کرتیں ہیں۔ گانے میں مزید کا گیا تھا کہ خواتین کے ساتھ جنسی زیادتی کے بعد انہی کو ملزم ٹھہرایا جاتا اور الزامات عائد کر دیئے جاتے ہیں۔قاتل آزاد ہیں اور خواتین کو زیادتی کا نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔خواتین نے ریلیز کردہ گانے میں ایکٹ کرتی نظر آئیں ، جنہوں نے اپنے چہرے کپڑے سے ڈھانپ کر رکھے تھے۔ جاری گانے پر تبصرہ کرتے ہوئے خواتین مارچ کا کہنا تھا کہ ہم ظلم کا شکار بننے کے لئے نہیں ہیں اور نہ ہی ہم کسی طرح سے ناامید ہیں۔ ہم میں اتنی طاقت ہے کہ ملکر اس ظلم کے خلاف لڑ سکتے ہیں۔ یاد رہے اس سے قبل بھی عورت مارچ پاکستان کے بڑے شہروں میں منعقد کیا گیا تھا جس کے بعد کچھ متنازعہ ویڈیوز اور تصاویر کو شدید تنقید کا نشانہ بھی بنا یا گیا تھا اور میرا جسم میری مرضی کے طرز پر لگائے گئے بینرز کو غیر اخلاقی قرار دےد یا تھا ۔

صحت و تندرستی کے لیے خاص مشورے