finalishtihaartop.jpg

This Page has 98403viewers.

Today Date is: 26-08-19Today is Monday

ہائی ٹرانسمیشن لائنوں انسانی زندگی کےلئے خطرے کا باعث ہیں لیسکو ہوش کے ناخن لے

  • پیر

  • 2019-06-03

لاہور(سٹاف رپورٹ ) لاہور ہربنس پورہ برلب نہر لاہور نزد سوئی گیس آفس واپڈا/لیسکو کی ہائی ٹینشن ٹرانسمیشن لائن ''132/کے وی اے'' گزرتی ہیں۔ جوپول نمبر 3/43 سے پول نمبر 4/43 تک جارہی ہیں۔ یہ لائنیں گھروں کے اُوپر سے گزرتی ہیں۔ جو کہ انسانی زندگی کےلئے خطرے کا باعث ہیں۔ یہاں رہائش قیامِ پاکستان 1947ء سے پہلے کی موجود تھیں جنکے اوپر بعد میں یہ لائنیں گزاری گئیں۔ پچھلے دنوں میں بجلی کی تار گرنے سے کئی افراد کی موت ہوچکی ہے۔جیسے اِن تاروں کی وجہ سے تین افراد کی موت ھوگئی جو کہ شادی کا سامان گھر کے اُوپر والے حصے میں لیجارہے تھے۔ اور ایسے ہی تاروں کی وجہ سے نشتر کالونی، شاہدرہ اور مختلف علاقوں میں اموات ہوچکی ہیں۔ جنکی ذمہ داری لیسکو اور واپڈا پر ہے۔اِن ہائی ٹرانسمشن لائنوں کی وجہ سے موبائل فون کے سگنلز نہیں آتے۔جس کی وجہ سے اہلِ علاقہ نواب پورہ، ہربنس پورہ، گوالہ کالونی اور دیگر ملحقہ علاقے مواصلات سے تقریباً محروم ہیں۔ اِن ہائی ٹرانسمیشن لائنوں کی وجہ سے گھروں میں ٹی۔وی، کیمپوٹر، لیپ ٹاپ، موبائل ، استری، فریج ، مائیکرویواوون اور دیگر قیمتی گھریلو سامان درست کام نہیں کرتے۔ اِن سے خارج ہونے والی برقیاتی خطرناک شعاعیں انسانی صحت بالخصوص یاداشت کےلئے خطرہ ہیں۔ اور کئی بیماریوں کا باعث بھی ہیں۔ جس کی وجہ سے علاقہ کے بچوں میں نئی نئی قسم کی بیماریاں پھیل رہی ہیں۔ اِن بیماریوں کی وجہ سے دانت گِرنا شروع ہوگئے ہیں۔ اور جوان افراد میں آنکھوں کی بیماریاں پیدا ہورہی ہیں۔ ناسمجھ آنے والی بیماریاں اور کینسر بھی بڑھ رھا ہے۔ اور یہ سب بجلی کی ہائی ٹینشن لائنز کی وجہ سے ہے۔ اہلِ علاقہ و رہائشی نواب پورہ، ہربنس پورہ، گوالہ کالونی نے چئیرمین واپڈا، چیف ایگزیکٹولیسکوجی ایس او گِرڈ سسٹم آپریشن ڈیپارٹمنٹس اور ٹی۔ایل۔سی کے افسران سے مطالبہ کیا ہے۔ کہ عوامی مُفاد کے لئے اِن ہائی ٹینشن ٹرانسمیشن لائنوں اور کھمبوں کو فوری طور پر ختم کیا جائے۔

صحت و تندرستی کے لیے خاص مشورے