bannerdlt2020.jpg

This Page has 238696viewers.

Today Date is: 01-10-20Today is Thursday

خطبات قرآن میری نظر میں تحریر:مولانا نوراللہ رشیدی

  • اتوار

  • 2020-01-26

خطبات قرآن میری نظر میں اکثر خطبا یہ شکایت کرتے نظر آتے ہیں کہ لوگ جمعہ کے دن مسجد میں بیان کے لیے جلدی نہیں آتے، حالاں کہ اس میں لوگوں کا قصور نہیں ہے، اصل قصور خطبا حضرات کا ہے کہ ان لوگوں نے مطالعہ کرنے کی محنت چھوڑدی ہے، جس کی وجہ سے سامعین کو کوئی خاص مواد نہیں دے سکتے، جب سامعین کو مواد نہیں ملتا تو و? مسجد میں جلدی آنا چھوڑ دیتے ہیں، اگرچہ انہیں پھر بھی جلدی آناچاہیے کیوں کہ جلدی آنے کے بہت فضائل اور بڑی برکتیں ہیں مگر اب خطبہ کی دوسری اذان سنتے ہی مسجد میں آتے ہیں، جماعت سے دو گانہ ادا کرتے ہیں اور چلے جاتے ہیں۔ اگر بیان کرنے والے سامعین کو علم دیتے، جس سے ان کے روحانی مسام معطر ہوتے، ان کے قلوب و اذہان کو تازگی ملتی تو و? کیوں بد دل ہوتے اور کیوں پیچھے ہٹتے، پیچھے و? نہیں ہٹے آپ نے ہٹایا ہے۔ آج بھی جو خطبا مطالعہ کرتے ہیں اور رجوع الی الل? کرتے ہیں اور فن خطابت سے واقف ہیں اور اسلوب دعوت کو مد نظر رکھ کر تقریر کرتے ہیں تو ان کی مسجدوں میں جمعہ کے دن بیان سے پہلے لوگ جمع ہوجاتے ہیں۔ کیا آپ نہیں جانتے کہ جو دھوبی کپڑے اچھے نہ دھوئے اسے کوئی کپڑا نہیں دیتا، جودرزی سلائی صحیح نہ کرے اس سے کوئی سلائی نہیں کراتا او جو دوکان دار ملاوٹ کرے گا، گاہک اس کی دوکان پر نہیں جاتا اسی طرح جو خطیب مسجد میں آنے والے نمازیوں کو علمی مواد نہیں دے گا تو لوگ اس خطیب بھی کو سننے نہیں آئیں گے۔ الل? پاک برادر مکرم، فاضل نواجوان حضرت مفتی محمد شکیل نقشبندی حفظہ الل? کو جزائے خیر عطا فرمائے جنہوں نے خطبا کے لیے ایک علمی کتاب بنام“خطبات قرآن ”لکھنے کا شروع کیا ہے جوعلما، ائمہ مساجد، خطبا اور طلبہ کے لیے یکساں مفید ہے،بلکہ جدید تعلیم یافتہ اور عوام الناس کے لیے یہ سلسلہ بہت اہم اور ضروری ہے۔ کیوں کہ اس میں جتنے خطبات ہیں و? سب کے سب قرآن کریم کے پیغامات سے مزین ہیں۔ بعض جدید تعلیم یافتہ لوگ عام طور پر یہ کہتے ہیں کہ انہیں خالص قرآن و سنت کی تعلیمات سنائی جائیں، ان کی اس چاہت کا سامان“خطبات قرآن ”کی شکل میں آچکا ہے، اب ان کے پاس کوئی عذر باقی نہیں رہا۔ اور آج کے مصروف ترین دور میں خطبا ایسی کتاب کی تلاش میں رہتے ہیں جس سے جمعہ کی یا تقریبات میں بیان کرنے کی تیاری کی جاسکے۔ موصوف نے بیان کرنے والوں کی اس مشکل کو بھی دور کردیا ہے۔ اس کتاب کی جلد اول میرے سامنے ہے، اس میں پیغام قرآن، نِکات قرآن، احکام قرآن اور اعجاز قرآن سب جمع ہیں، جس سے علمی پیاس بھی بجھتی ہے اور روحانی سرور بھی ملتا ہے۔آیات کی واضح اور باحوالہ تفسیر کی گئی ہے اور جہاں احادیث مبارک پیش کی گئی ہیں تو ساتھ ہی ان کی تشریح بھی دلنشین انداز مینکردی گئی ہے۔ گویا قرآن و سنت سے سجا دستر خوان آپ کے لیے چن دیا گیا ہے، ابھی اس سے فائد? اٹھانا آپ کے ذمہ ہے۔ جمعہ اور تقریبات میں ایک ہی فکرو عمل کے لوگ نہیں ہوتے، خطیب ہر خیال اور مسلک کے لوگوں کی اصلاح و تربیت اسی وقت کرسکتا ہے، جب کہ و? جمعہ کے اس اجتماعی ماحول کا پورا دھیان رکھ کر بیان کرے۔ الحمد “خطبات قرآن”اجتماعی ماحول میں ایک دینی آواز ہے اور ایک مشترکہ صدائے محراب ہے، جن پر فرقہ بندی کا کوئی بوجھ نہیں اور ہر مسلک کا ہر فرد ان سے بجا طور پر فائد? اٹھاسکتا ہے۔ اور“خطبات قرآن”نے نئے نئے تیار ہونے والے خطیبوں کو ایسی زمین فراہم کردی ہے جن پر و? اپنی تعمیر کرکے مسقبل کے مستقل خطیب اور داعی قرآن بن سکیں گے۔ حضرت مفتی صاحب اس امتیازی کام پر اہل علم و قلم کی جانب سے تبریک کے قابل ہیں۔ ایالل?! ایسے نوجوان فضلا میں مزید اضافہ فرما اور ایسے اہل علم و قلم کی حفاظت فرما اور سعادت مند حضرات کو ان کی قدر کرنے کی توفیق عطا فرما۔

صحت و تندرستی کے لیے خاص مشورے